Monday, March 1, 2021
Home Business پاکستان ، آئی ایم ایف کے قریب 500 ملین کی رہائی...

پاکستان ، آئی ایم ایف کے قریب 500 ملین کی رہائی کے لئے اصلاحات پر معاہدہ

اسلام آباد: حکومت نے پیر کو اگلے 13 دن تک پٹرولیم قیمتوں میں اضافہ نہ کرنے کا فیصلہ کیا۔

پچھلے پانچ خوشحالیوں کے دوران قیمت میں مسلسل اضافے سے یہ وقفہ آیا ہے۔ پچھلے 15 دنوں کے دوران تیل کی بین الاقوامی قیمتوں میں اضافے کے باوجود یہ تھا۔ قومی اور صوبائی اسمبلی کی سات نشستوں پر ضمنی انتخابات آئندہ 13 روز کے دوران 3 مارچ کو طے شدہ سینیٹ انتخابات کے لئے انتخابی کالج مکمل کرنے کے لئے ہونے والے ہیں۔

موجودہ سطح پر قیمتوں کو برقرار رکھنے کے لئے ، پیٹرولیم لیوی (پی ایل) کو پٹرول پر 3.07 روپے کمی کرکے 21.04 روپے کی بجائے 17.97 روپے فی لیٹر کردیا گیا۔ ایچ ایس ڈی پر پی ایل 22.11 روپے کی بجائے 3.75 روپے فی لیٹر گر کر 18.36 روپے پر ہے۔ اس کے علاوہ ، مٹی کے تیل پر پی ایل فی لٹر 2.78 روپے کی کمی سے 2،76 روپے پر آگیا۔ ایل ڈی او پر پی ایل بھی 6.21 روپے فی لیٹر سے 3.26 روپے کم کرکے 3.65 روپے ہوگئی۔

وزیر اعظم آفس سے جاری ایک بیان میں کہا گیا ہے ، “وزیر اعظم عمران خان نے عوام کو ریلیف فراہم کرنے کے لئے پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں مجوزہ اضافے کے لئے آئل اینڈ گیس ریگولیٹری اتھارٹی (اوگرا) کی سمری کو مسترد کردیا ہے۔”

اس میں کہا گیا ہے کہ اوگرا نے پیٹرول میں 14.07 روپے فی لیٹر ، ہائی اسپیڈ ڈیزل میں 13.61 روپے ، مٹی کے تیل میں 10.79 روپے اور لائٹ ڈیزل آئل (ایل ڈی او) میں 7.43 روپے اضافے کی سفارش کی تھی۔

وزیر اعظم کے حوالے سے بیان میں کہا گیا ہے کہ “حکومت لوگوں کو ریلیف فراہم کرنے کے لئے ہر حد تک کوشش کرے گی۔” اسی طرح ، ایچ ایس ڈی اور پیٹرول کی سابقہ ڈپو قیمت بالترتیب 116.07 روپے اور 111.90 روپے فی لیٹر پر برقرار نہیں رہے گی۔ اسی طرح مٹی کے تیل اور ایل ڈی او کی سابقہ ڈپو قیمت بالترتیب بالترتیب 80.1..19 روپے اور .279..23 روپے فی لیٹر کی قیمتوں پر جاری رہے گی۔

تیل کی بین الاقوامی قیمتوں کے اضافے کے اثرات کو ختم کرنے کے لئے حکومت 30 نومبر 2020 سے ہر پندرہواں پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں اضافہ کرتی رہی ہے۔ اس کے بعد سے HSD کی قیمت میں 14.67pc (14.85 روپے فی لیٹر) کا اضافہ ہوا ہے ، جبکہ پٹرول کی شرح میں 11.13pc (11.20 روپے فی لیٹر) اضافہ ہوا ہے۔اسی طرح مٹی کا تیل 18.6pc (14.90 روپے فی لیٹر) جبکہ ایل ڈی او نے 265 پی سی (16.37 روپے فی لیٹر) اضافے سے پانچ حصnہ داروں میں چھلانگ لگا دی ہے۔

سرکاری ہدایات کے تحت ، اوگرا کو تیل کی قیمتوں کا حساب 17 پی سی جنرل سیلز ٹیکس کی بنیاد پر اور HSD اور پیٹرول پر 30 روپے فی لیٹر قانون کے تحت جائز زیادہ سے زیادہ پٹرول لیوی پر کرنا ہے۔

ایک عہدیدار نے بتایا کہ حکومت نے رواں مالی سال کے پہلے چھ مہینوں میں پیٹرولیم مصنوعات پر پٹرولیم مصنوعات پر حاصل ہدف آمدن سے تقریبا 33 p 33 پی سی زیادہ رقم وصول کی ہے۔ لہذا ، یہ پیٹرولیم لیوی میں معمولی ایڈجسٹمنٹ کے ساتھ آرام دہ تھا۔ وزارت خزانہ کے مطابق ، پٹرولیم لیوی کے حساب سے اکھٹا کرنے والے سالانہ ہدف 450bn ارب روپے کے مقابلے میں پہلے چھ ماہ میں 275 ارب روپے ہیں۔

پچھلے کئی مہینوں سے حکومت جی ایس ٹی کے بجائے پیٹرولیم لیوی نرخوں پر تبادلہ خیال کررہی ہے کیونکہ وفاقی کٹی میں بھی لیوی باقی رہتا ہے جبکہ جی ایس ٹی تقسیم پزول ٹیکس پر جاتا ہے اور اس طرح صوبوں نے اس میں تقریباp pc پی سی حصص پر قبضہ کرلیا ہے۔

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here

- Advertisment -

Most Popular

لاہورہائیکورٹ نے منی لانڈرنگ کیس میں حمزہ شہباز کو 20 ماہ بعد ضمانت دی

لاہور ہائیکورٹ نے منی لانڈرنگ کیس میں بدھ کے روز پنجاب اسمبلی میں اپوزیشن لیڈر حمزہ شہباز کی ضمانت منظور کرتے ہوئے جیل حکام...

احسان اللہ احسان کے فرار سے متعلق فوجی افسران کے خلاف کارروائی: ڈی جی آئی ایس پی آر

بی بی سی اردو کے مطابق ، بین القوامی تعلقات عامہ (آئی ایس پی آر) کے سربراہ میجر جنرل بابر افتخار نے کہا ہے...

پنڈی اسکولوں کی عمارتوں میں غیر معیاری کام کا پتہ چلا

راولپنڈی: ضلعی بلڈنگ ڈیپارٹمنٹ نے ناقص تعمیراتی کام کا پتہ لگانے کے بعد لڑکوں اور لڑکیوں کے اسکولوں کے نو تعمیر شدہ بلاکس لینے...

خٹک نے ضمنی انتخاب کے نتائج کو چیلنج کرنے کا عزم کیا

نوشہرہ: پی کے 63 کے ضمنی انتخاب کے نتائج کو مسترد کرتے ہوئے ، وفاقی وزیر دفاع پرویز خٹک نے اتوار کے روز دعویٰ...

You have successfully subscribed to the newsletter

There was an error while trying to send your request. Please try again.

AFASAA will use the information you provide on this form to be in touch with you and to provide updates and marketing.